PDMA KP organizes walk in Jamrud to mark National Disaster Awareness Day

 وز یر اعلی خیبر پختونخوا محمو د خان کی خصو صی ہدا یت پر  پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے)،خیبر پختونخوا کے ذیر اہتمام صو بے بھر میں قدرتی آفات سے آگاہی کا قومی دن اس تجدید کے ساتھ منا یاگیا کہ قدرتی آفات سے درپیش نقصانات کو بہتر حکمت عملی کے ساتھ کم کیا جا سکتا ہے۔
اس سلسلے میں صوبائی اور ضلعی سطع پر عوام میں قدرتی آفات میں بچاؤ اور احتیاطی تدابیر سے متعلق صوبے بھر میں تعلیمی اور سرکاری اداروں میں خصوصی تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔پی ڈی ایم اے کے زیر انتظام مرکزی تقریب ضلع خیبر جرگہ ہال میں منعقد کی گئی۔ جس میں نے قدرتی آفات سے آگاہی کے قو می دن کے موقع پر جرگہ ہال سے باب خیبر تک آگاہی واک کا انعقاد کیا گیا۔ منعقدہ واک میں اعلی حکام، ضلعی انتظامیہ، قبائلی عمائدین اور کثیر تعداد میں طلباء نے شرکت کی۔واک کا مقصد عوام میں قدرتی آفات سے متعلق شعور اور آگاہی پیدا کرنا اور آفات سے بچاؤ کے لئے  نقصانات کو کم کر نے کی اہمیت اجا گر کو کرنا تھا۔
ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے پر ویز خان نے اس موقع پر کہا کہ کہ  پوری دنیا میں موسمی تغیر اور بڑھتے ہوئے درجہ حرارت سے قدرتی آفات وقوع پزیر ہو رہے ہیں۔اکیسویں صدی کی پہلی دو دہایؤں سے پاکستان ایک تسلسل کے ساتھ قدرتی آفات کا شکار رہا ہے جس میں سیلاب، زلزلے، طوفان،  برفانی تودوں کا گرنااور خشک سالی شامل ہے۔
8اکتوبر،  2005 میں پاکستان کی تاریخ کا بدترین زلزلہ آیا جس سے خیبر پخونخوا اور آذاد کشمیر میں ستر ہزار سے ذائد افراد جابحق ہوئے اور ایک لاکھ سے ذائد افراد زخمی ہوئے جبکہ تقر یبا پانچ ارب ڈالر کا نقصان ہوا۔ 8 اکتوبر سانحے کے بعد قدرتی آفات سے نمٹنے کے لئے وفاقی اور صوبائی سطع پر موثر حکمت عملی کے تحت اداروں کا قیام عمل میں لایا گیا جو کہ آفات سے نمٹنے کی انتظامی استطاعت رکھتے ہیں. پی ڈی ایم اے خیبر پختونخوا صوبائی سطح پر قدرتی آفات سے نمٹنے کے لئے ایک فعال اور منصوبہ ساز ادارہ ہے جو آفات سے نمٹنے، آفات کے خطرات میں کمی لانے اور تیاری سے متعلق منصوبہ سازی کرتا ہے۔ اور اپنی منصوبہ سازی کے تحت اس بات کو یقینی بناتا ہے کہ تمام تر امدادی کاروائیوں میں عورتوں،بزرگوں،بچوں اور معذورافراد اور انفرسٹرکچر کو نقصان سے بچاؤ کا خاص خیال رکھا جائے، قدرتی آفات سے درپیش خطرات کو بروقت آگاہی اور بہتر حکمت عملی سے کم کرنا صوبائی حکومت کی اولین ترجیح  ہے۔
 آفات کے نقصانات کو کم کرنے سے معاشی اور سماجی ستحکام لایا جا سکے گااورممکنہ آفات سے متاثرہ علاقوں میں تمام ترقیاتی منصوبوں میں آفات کے خطرات کو ملحوظ نظر رکھ کر حکمت عملی ترتیب دینے میں مدد گار ثابت ہونگے۔ انہو ں نے مز ید بتا یا کہ عوام کی آگاہی کے لئے ر یڈ یو پر معلوماتی پیغامات بھی تواتر کے ساتھ نشر کئے جارہے ہیں اور پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا کا بھی سہارا لیا جارہا ہے۔اس مو قع پر زلزلے میں جا ں بحق افراد کے لیے خصوصی دعا کی گئی۔